• Web
  • Humsa
  • Videos
  • Forum
  • Q2A
rabia shakeel : meri dua hai K is bar imran khan app is mulk k hukmaran hun To: suman(sialkot) 5 years ago
maqsood : hi how r u. To: hamza(lahore) 5 years ago
alisyed : hi frinds 5 years ago
nasir : hi To: wajahat(karachi) 5 years ago
khadam hussain : aslamoalikum pakistan zinsabad To: facebook friends(all pakistan) 5 years ago
Asif Ali : Asalaam O Aliakum . To: Khurshed Ahmed(Kashmore) 5 years ago
khurshedahmed : are you fine To: afaque(kashmore) 5 years ago
mannan : i love all To: nain(arifwala) 5 years ago
Ubaid Raza : kya haal hai janab. To: Raza(Wah) 5 years ago
qaisa manzoor : jnab AoA to all 5 years ago
Atif : Pakistan Zinda bad To: Shehnaz(BAHAWALPUR) 5 years ago
khalid : kia website hai jahan per sab kuch To: sidra(wazraabad) 5 years ago
ALISHBA TAJ : ASSALAM O ELIKUM To: RUKIYA KHALA(JHUDO) 5 years ago
Waqas Hashmi : Hi Its Me Waqas Hashmi F4m Matli This Website Is Owsome And Kois Shak Nahi Humsa Jaise Koi Nahi To: Mansoor Baloch(Matli) 5 years ago
Gul faraz : this is very good web site where all those channels are avaiable which are not on other sites.Realy good. I want to do i..... 5 years ago
shahid bashir : Mein aap sab kay liye dua'go hon. 5 years ago
mansoor ahmad : very good streming 5 years ago
Dr.Hassan : WISH YOU HAPPY HEALTHY LIFE To: atif(karachi) 5 years ago
ishtiaque ahmed : best channel humsa live tv To: umair ahmed(k.g.muhammad) 5 years ago
Rizwan : Best Streaming Of Live Channels. Good Work Site Admin 5 years ago
پاک بھارت ویزا پالیسی پرعملدرآمد نہیں ہو سکا
[ Editor ] 15-01-2013
Total Views:1068
پاکستان اور بھارت کے درمیان بزرگ شہریوں کو سرحد پر ویزے دینے کی پالیسی پر عملدرآمد شروع نہیں ہو سکا اور واہگہ کے مقام پر بھارتی امیگریشن حکام نے دو پاکستانی بزرگ شہریوں کو سرحد سے ہی واپس بھجوا دیا۔بھارت نےدونوں ملکوں کے درمیان حال میں ہوئے ویزے میں نرمی کے معاہدے پر عمل درآمد کو موخر کر دیا ہے۔

واہگہ پر پاکستانی امیگریشن کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر اسد اعوان نے بی بی سی کو بتایا کہ ان دونوں پاکستانی شہریوں کو انڈیا جانے کے لیے پاکستانی حکام نے کلیئر کردیا تھا لیکن بھارتی حکام انہیں واپس بھجوا دیا۔

واہگہ باڈر سے واپس جانے والے دونوں بزرگ پاکستانی شہری لاہور کے رہائشی ہیں اور ان کا کہنا ہے کہ انہیں بھارتی حکومت کے اس فیصلے سے خاصی مایوسی ہوئی ہے۔

بھارت اور پاکستان کے حکام نے اعلان کیا تھا کہ پندرہ جنوری سے دونوں ممالک کے پینسٹھ سال سے زیادہ عمر کے شہریوں کو بارڈر پر ویزہ دیا جائے گا۔

اسی اعلان پر یقین کر کے جب انہتر سالہ محمد ظفر اور سڑسٹھ سالہ عبدالرشید واہگہ باڈر پہنچے تو پاکستانی امیگریشن حکام نے ان کے پاسپورٹ پر روانگی کی مہر بھی لگا دی لیکن دونوں بزرگ مسافر واہگہ کو پار نہ کر سکے۔

انہتر سالہ سید محمد ظفر نے بی بی سی سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ انہیں پہلے ہی خدشہ تھا کہ ویزہ اتنی آسانی سے نہیں ملےگا۔وہ سہارن پور جانا چاہ رہے تھے جہاں ان کے خالہ زاد بھائی رہتے ہیں۔

سڑسٹھ سالہ عبدالرشید نے کہا کہ انہوں نے ساری زندگی بیرون ملک محنت مزدوری میں گزاری لیکن ان کے عزیز و اقارب انڈیا اور پاکستان میں بکھرے ہوئے ہیں۔

ادھر منگل کو لاہور کے واہگہ باڈر پر پاکستانی عملے کی تیاریاں مکمل تھیں۔ پنجاب ٹورازم ڈویلپمنٹ کارپوریشن کے پروٹوکول افسر ایک ویگن سمیت سرحد پر موجود تھے تاکہ بزرگ شہریوں کو شہر تک کی سواری مہیا کی جائے،امیگریشن اور کسٹمز کے عملے کو دی گئی ہدایات کے مطابق ویزے کا مطالبہ کرنے والے بزرگ شہریوں کو پینتالیس روز کا اجازت نامہ دیا جانا تھا۔

اسی دوران ایک بھارتی بزرگ صحافی چنچل منوہرسنگھ نے سرحد پار کی جنہیں پاکستانی عملے نے ویزا دیا۔لیکن وہ نئی پالیسی کے پہلے اور آخری بزرگ مسافر ثابت ہوئے۔ سی ایم سنگھ کا شمار ان صحافیوں میں ہوتا ہے جو دونوں ملکوں کے درمیان امن قائم کرنے کے لیے کوشش کر رہے ہیں اور وہ پہلے بھی کئی بار پاکستان آ چکے ہیں۔

چنچل منوہرسنگھ نے کہا کہ ان کے ہمراہ دیگر چار افراد بھی پاکستان آنا چاہ رہے تھے لیکن ان کے اہلخانہ نے انہیں یہ کہہ کر روک لیا کہ پاکستان میں حالات خراب ہیں۔سی ایم سنگھ نے کہا کہ دونوں ملکوں کے شہری ایک دوسرے کے ملک جائیں گے تو تب ہی ایک دوسرے کے بارے میں بدگمانیوں کا خاتمہ ہوسکے گا۔

سی ایم سنگھ لاہور میں دس روز تک قیام کرنا چاہتے ہیں اور اس دوران وہ حضرت بابا گرونانک کے جنم استھان پر حاضری دینے بھی جائیں گے۔

سی ایم سنگھ کی آمد پر سرحد پر موجود وہ بزرگ پاکستانی خوش ہوئے تھے جو نئی ویزہ پالیسی کی معلومات لینے آئے تھے لیکن بعد میں پاکستانی مسافروں کو ویزا نہ ملنے پر انہیں مایوسی ہوئی۔
(بی بی سی نیوز)

About the Author: Editor
Visit 171 Other Articles by Editor >>
Comments
Add Comments
Name
Email *
Comment
Security Code *


 
مزید مضامین