• Web
  • Humsa
  • Videos
  • Forum
  • Q2A
rabia shakeel : meri dua hai K is bar imran khan app is mulk k hukmaran hun To: suman(sialkot) 5 years ago
maqsood : hi how r u. To: hamza(lahore) 5 years ago
alisyed : hi frinds 5 years ago
nasir : hi To: wajahat(karachi) 5 years ago
khadam hussain : aslamoalikum pakistan zinsabad To: facebook friends(all pakistan) 5 years ago
Asif Ali : Asalaam O Aliakum . To: Khurshed Ahmed(Kashmore) 5 years ago
khurshedahmed : are you fine To: afaque(kashmore) 5 years ago
mannan : i love all To: nain(arifwala) 5 years ago
Ubaid Raza : kya haal hai janab. To: Raza(Wah) 5 years ago
qaisa manzoor : jnab AoA to all 5 years ago
Atif : Pakistan Zinda bad To: Shehnaz(BAHAWALPUR) 5 years ago
khalid : kia website hai jahan per sab kuch To: sidra(wazraabad) 5 years ago
ALISHBA TAJ : ASSALAM O ELIKUM To: RUKIYA KHALA(JHUDO) 5 years ago
Waqas Hashmi : Hi Its Me Waqas Hashmi F4m Matli This Website Is Owsome And Kois Shak Nahi Humsa Jaise Koi Nahi To: Mansoor Baloch(Matli) 5 years ago
Gul faraz : this is very good web site where all those channels are avaiable which are not on other sites.Realy good. I want to do i..... 5 years ago
shahid bashir : Mein aap sab kay liye dua'go hon. 5 years ago
mansoor ahmad : very good streming 5 years ago
Dr.Hassan : WISH YOU HAPPY HEALTHY LIFE To: atif(karachi) 5 years ago
ishtiaque ahmed : best channel humsa live tv To: umair ahmed(k.g.muhammad) 5 years ago
Rizwan : Best Streaming Of Live Channels. Good Work Site Admin 5 years ago
کاروبار کی فکر بچوں کی فلموں میں رکاوٹ
[ Editor ] 14-12-2012
Total Views:1103

بھارتی فلمی صنعت کو سو سال پورے ہونے والے ہیں۔ ان سو برسوں میں فلم نے کئی رنگ بدلے لیکن ایک چیز بالکل نہیں بدلی اور وہ یہ کہ بچوں کے لیے پہلے بھی کم فلمیں بنتی تھی اور آج بھی کم ہی فلمیں بنتی ہیں۔


شاید بچوں کے لیے بنائی جانے والی فلموں میں فلمساز محض اس لیے پیسہ نہیں لگانا چاہتے کیونکہ ان فلموں کے باکس آفس پر اچھا کاروبار کرنے کی ضمانت نہیں ہوتی۔


’تارے زمین پر‘ کے مصنف اور ’سٹینلي کا ڈبہ‘ کے ہدایتکار امول گپتے نے بی بی سی ہندی سے بات کرتے ہوئے کہا ’ ہمارے یہاں بچوں کے لیے بہت ہی کم فلمیں بنتی ہیں۔اسی بات سے پتہ چل جاتا ہے کہ ہم بچوں کی کتنی عزت کرتے ہیں‘۔


ان کا کہنا تھا کہ ’ہمارے یہاں بچوں کو بچہ سمجھ کر کاٹ دیا جاتا ہے۔ ہمیں لگتا ہے بچے تو بس چاکلیٹ اور ایک میچ میں ہی خوش ہیں۔ جس دن ہم بچوں سے مضبوط دوستی کر لیں گے، اس دن ایک نیا سورج طلوع ہوگا۔‘


ان کا مزید کہنا تھا ’آج کی تاریخ میں آپ اگر بچوں کے لیے کوئی فلم بنانا چاہتے ہیں تو آپ سے براہ راست پوچھا جاتا ہے کہ اس فلم کا ’ریونیو ماڈل‘ کیا ہے۔ فلمساز سیدھا سیدھا کہتے ہیں کہ ہم اس فلم میں جو پیسہ لگائیں گے وہ تو ہمیں واپس ملے گا ہی نہیں۔‘


بچوں کے عالمی دن کے موقع پر امول تو یہ سوال بھی کرتے ہیں کہ کیا ہم صرف پیسوں کے لیے بچوں کے علم میں اضافہ کرنا چاہتے ہیں یا پھر ہم سچ میں چاہتے ہیں کہ ہمارے بچے نئی چیزیں سیکھیں۔


مول لکھاری بھی ہیں، اداکاری بھی کرتے ہیں اور ہدایت کار بھی ہیں۔ بی بی سی نے امول سے پوچھا کہ جب وہ اپنی فلم میں بچوں کے ساتھ کام کرتے ہیں تو کیسا ماحول ہوتا ہے؟


اس سوال کے جواب میں امول کہتے ہیں،’سب سے پہلے تو میں آپ سے یہ کہنا چاہتا ہوں کہ میں بچوں کے ساتھ کام نہیں کرتا اور نہ ہی بچے میرے ساتھ کام کرتے ہیں۔ ہم تو بس مستی کرتے ہیں‘۔


وہ کہتے ہیں ’فلم اکیسویں صدی کا فن ہے۔ بچے اگر اس فن میں دلچسپی لے رہے ہیں تو ان کی دلچسپی کو بڑھانے کے لئے ہمیں انہیں اچھی فلمیں دکھانا ضروری ہے‘۔


امول کا کہنا ہے کہ وہ بچوں کو چارلي چپلن کی فلم ’دی كِڈ‘ دیکھنے کا مشورہ دیتے ہیں۔ امول کے مطابق ’یہ ایک انتہائی خوبصورت فلم ہے۔‘


امول ایران کے ماجد مجيدي کی فلم ’چلڈرن آف ہیون‘ دیکھنے کا مشورہ دیتے ہوئے کہتے ہیں کہ یہ فلم دل کو چُھونے والی ہونے کے ساتھ ساتھ حقیقت کے بہت قریب بھی ہے۔








About the Author: Editor
Visit 171 Other Articles by Editor >>
Comments
Add Comments
Name
Email *
Comment
Security Code *


 
مزید مضامین
انڈونیشیا : بارش کیلئے ایک دوسرے کو کو ڑے مارنے کی وحشیانہ رسم این جی ٹی…دنیا بھر میں مختلف قسم کی رسمیں ادا کی جاتی ہیں جو منفرد اور دلچسپ ہونے کے ساتھ ساتھ بعض اوقات تکلیف دہ بھی ہو تیں ہیں۔ انڈونیشیا کے بعض دیہی علاقوں میں بھی ایک ایسی ہی سالانہ وحشیانہ رسم .... مزید تفصیل
مذہب سے دوری اور روحانیت سے لگاؤ محققین کا کہنا ہے کہ روحانیت سے لگاؤ رکھنے والے افراد کی ذہنی صحت روایتی طور پر مذہب سے لگاؤ رکھنے والوں، مادہ پرست یا دہریے افراد کے مقابلے میں ممکنہ طور پر زیادہ خراب ہو سکتی ہے۔ لیکن سوال یہ ہے کہ .... مزید تفصیل
 الباکستانیوں کے اصولی موقف ہم نے ایک قوم کی حیشیت سے ایسے منطقی اور فلسفیانہ دلائل بناۓ ہیں جو ہمارے ارد گرد کی دنیا کی تعبیر کریں۔ ہو سکتا ہے کہ وہ دنیا کی تعبیر نہ کریں لیکن وہ ہمارے ذہن کی ضرور تعبیر کرتے ہیں۔ ہمیں ایسے .... مزید تفصیل